طلبہ مثبت سوچ کے ساتھ عصر حاضر کے لیے درکار صلاحیتوں کو پروان چڑھائیں، گورنمنٹ ڈگری کالج ظہیر آباد میں سمپوزیم


طلبہ مثبت سوچ کے ساتھ عصر حاضر کے لیے درکار صلاحیتوں کو پروان چڑھائیں
گورنمنٹ ڈگری کالج ظہیر آباد میں سمپوزیم، پروفیسر محمود صدیقی اور دیگر کا خطاب

ظہیر آباد : 21۔اپریل
(سحر نیوز/ پریس نوٹ)

دؤر حاضر میں طلبہ اور نوجوانوں کو کئی مسائل اور چیلنجز کا سامنا ہے اور ان مسائل کے حل کے لیے طلبہ اور نوجوانوں کو عصری صلاحیتوں سے خود کو ہم آہنگ کرنا ہوگا۔نامساعد حالات میں طلبہ مایوسی اور منفی طرز فکر ترک کریں، مثبت سوچ اور جہد مسلسل کے ساتھ آگے بڑھیں اور ایسا کوئی کام کریں کہ دنیا انہیں یاد رکھے۔

ان خیالات کا اظہار پروفیسر محمود صدیقی آفیسر آن اسپیشل ڈیوٹی۔مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی(مانو)نے گورنمنٹ ڈگری کالج ظہیر آباد میں شعبہ سیاسیات کی جانب سے منعقدہ ایک روزہ سمپوزیم” طلبہ میں صلاحیتوں کا فروغ اور عصری تقاضے ” سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس سمپوزیم میں حیدرآباد سے پروفیسر محمود صدیقی کے علاوہ ڈاکٹر نجی اللہ صدر شعبہ عوامی انتظامیہ مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی اور ڈاکٹر عابد معز ماہر تغذیہ و نامور مزاح نگار نے شرکت کی۔

ڈاکٹر محمد غوث صدر شعبہء سیاسیات گورنمنٹ ڈگری کالج ظہیر آباد اور اس سمپوزیم کے کنوینر نے اپنے خیر مقدمی خطاب میں تمام مہمانوں، ساتھی لیکچرارز، طلباء و طالبات کا استقبال کرتے ہوئے کہاکہ شعبہء سیاسیات کی جانب سےمنعقدہ اس ایک روزہ سمپوزیم کے انعقاد کا مقصد کالج کے طلباء و طالبات میں عصری تقاضوں کے حل کے لیے درکار صلاحیتوں کے حصول کے لیے تربیت فراہم کرنا ہے۔

ڈاکٹر نرہری مورتی صدر شعبہء انگریزی نے اپنے خطاب میں کہاکہ موجودہ دؤر میں سوشل میڈیا اور موبائل فون کے کثرت استعمال سے نوجوان اپنی توجہ کسی ایک کام میں مرکوز نہیں کر پا رہے ہیں جس سے ان کی ترقی متاثر ہو رہی ہے انہوں نے یوگا کے ذریعہ ذہنی یکسوئی پر مہارت حاصل کرنے اور اچھی صحت کے ساتھ زندگی کے لیے درکار مہارتوں کو حاصل کرنے پر زور دیا۔

ڈاکٹر نجی اللہ نے کہا کہ آج طلبہ کو ترقی اور مہارتوں کے حصول کے لیے کئی وسائل دستیاب ہیں۔ طلبہ اعلیٰ تعلیم کے حصول کے لیے مولانا آزاد اردویونیورسٹی کے مختلف کورسز سے استفادہ کریں اسمارٹ فون کا استعمال معلومات کے حصول کے لیے کریں۔

ڈاکٹر عابد معز ماہر تغذیہ نے اس سمپوزیم سے اپنے خطاب میں کہا کہ اچھی صلاحیتوں کے حصول اور زندگی کے مسائل کا سامنا کرنے کے لیے انسان کی صحت اچھی ہونا چاہئے۔انہوں نے نوجوانوں اور طلبہ کو مشورہ دیا کہ وہ تغذیہ سے بھرپور غذا استعمال کریں،پانی کا زیادہ استعمال کریں اور غیر صحت بخش جنک فوڈ سے پرہیز کریں۔

انہوں نے کہاکہ ہمیں اپنی مادری زبان سے محبت ہو جس کو مادری زبان پر عبورحاصل ہوگا وہ دنیا کی دیگر زبانوں پر بھی مہارت حاصل کرے گا۔ ڈاکٹر عابد معز نے طلبہ کو مشورہ دیا کہ زندگی میں ایک سے زیادہ حدف مقرر کرنے چاہئیں اور اپنے مقاصد میں کامیابی حاصل کرنی چاہئے۔

ڈاکٹر محمد اسلم فاروقی پرنسپل کالج نے اس سمپوزیم میں حیدر آباد سے شرکت کرنےوالے ماہرین کا خیر مقدم کرتےہوئے کہا کہ زندگی انسان کو ملنے والی عظیم نعمت ہے۔نوجوان وقت کی قدر کریں وقت ضائع کرنے والے کاموں کو ترک کریں۔ انہوں نے کہا کہ مثالی انسان حضرت محمد مصطفی ﷺ کی حیات سے سبق حاصل کریں، اساتذہ سے تربیت حاصل کریں اور عصر حاضر کے تقاضوں سے ہم آہنگ ہونے والی صلاحیتوں کو اختیار کریں۔ڈاکٹر محمد اسلم فاروقی انہوں نے کہا کہ دنیا میں بے شمار لوگ ہیں لیکن قدر ان کی ہوتی ہے جو صلاحیتوں سے لیس ہوتے ہیں۔لوگ اپنے لیے جیتے ہیں ہمیں کچھ ایسا کام کرنا ہوگا جس سے انسانیت کو فائدہ پہنچے۔

اس تقریب کے اختتام پر ڈاکٹر عابد معز نے کالج کی لائبریری کے لیے اپنی تصانیف کا تحفہ پیش کیا۔مہمانوں کی شال و گلپوشی کی گئی۔ڈاکٹر محمد تنویر نے سمپوزیم کی نظامت انجام دی۔ڈاکٹر سریندر نے اظہارتشکر پیش کیا۔اس سمپوزیم میں کالج کےلیکچرارز ڈاکٹر عائشہ بیگم،شکنتلا،راملو سدپا، مظفر پولس،پروین ناگراج،جگن موہن،ڈاکٹر رابعہ ڈاکٹر عشرت مسرت،ثروت عرفانہ اسما واجد علی اور دیگر نے شرکت کی۔اس سمپوزیم میں حیدر آباد سے جناب مظفر اور ڈاکٹر جان نثار معین ظہیر آباد نے شرکت کی اور مہمانوں کا خیر مقدم کیا۔

 

یہ بھی پڑھیں

تلنگانہ میں انٹرمیڈیٹ سالانہ امتحانات کے نتائج کی تاریخ کا اعلان

تلنگانہ میں تین دنوں تک گرج چمک اور تیز ہواوں کے ساتھ شدید بارش کی پیش قیاسی، کئی اضلاع کے لیے محکمہ موسمیات کا ایلو الرٹ جاری

 

تانڈور : موضع گوٹلا پلی کے ساکن محمد اشفاق نے یو پی ایس سی میں 770 واں رینک حاصل کیا

 


Post Views: 4,003

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top